گلگت سکردو روڈ کی تعمیر میںمسلسل تاخیر

Posted on Updated on

Image
Gilgit Skardu Road

صوبائی وزیر قانون وزیر شکیل نے کہا ہے کہ گلگت سکردو روڈ کی تعمیر میں وفاقی حکومت مخلص نہیں وفاق کی عدم دلچسپی کے باعث اہم ترین منصوبہ کھٹائی پڑ گیا ہے، ایشیائی ترقیاتی بینک نے گلگت سکردو روڈ کی تعمیر کی یقین دہانی کروائی تھی جس کے تحت تقریباً80فیصد فنڈز ایشیائی ترقی بینک نے جبکہ صرف20فیصد فنڈز حکومت پاکستان نے ادا کرنے تھے، پراجیکٹس کے معاہدے کے مطابق وفاقی حکومت نے اپنے حصے کے 20فیصد رقم سے منصوبے کا آغاز کرنا تھا، مگر وفاقی حکومت نے اس منصوبے پر دلچسپی نہ دکھائی اور کام کا آغاز نہ ہو سکا اور نہ ہی بروقت منصوبے کیلئے فنڈز ریلیز ہو سکے انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت صرف انتظار ہی کرتی رہی اور منصوبہ آخر کار ڈھیر ہو گیا اب نئے سرسے سے ٹینڈر طلب کئے جارہے ہیں وزیر شکیل احمد نے کہا کہ گلگت سکردو روڈ کی تعمیر کے حوالے سے ہمیں تحفظات ہیں اور جلد ہم ان تحفظات اور خدشات سے وزیر اعظم پاکستان کو آگاہ کرینگے۔
گلگت سکردو روڈ نہ صرف بلتستان ڈیژن کی 7لاکھ کے قریب آبادی کیلئے واحد گزرگاہ ہے بلکہ یہ شاہراہ دفاعی اور عسکری لحاظ سے بھی انتہائی اہمیت کا حامل ہے دنیا کا بلند ترین محاذجنگ سیاچن، دنیا کی اہم ترین بلند پہاڑی سلسلے و چوٹیاں، کارگل کا علاقہ سمیت اہم مقامات اسی علاقے میں واقع ہیں سکردو کیلئے گلگت کی طرح آل ویدر فلائٹس نہ ہونے کی وجہ سے فضائی رابطوں کا کوئی بھروسہ نہیں ہے دوسری طرف ایک عام آدمی اتنی بھاری کرایے ادا کرکے ہوائی جہاز میں سفر نہیں کر سکتا۔ ایسے میں بلتستان ڈویژن کی آبادی کیلئے یہی شاہراہ واحد گزر گاہ ہے جبکہ یہی راستہ دفاعی نقل و حمل کیلئے بھی استعمال ہوتا رہا ہے اس شاہرہ کی تعمیر کیلئے نہ وفاقی حکومت مخلص رہی ہے اور نہ ہی صوبائی حکومت ان دونوں کی وجہ سے نقصان صرف اور صرف عوام کا ہی ہو رہا ہے وزیر قانون نے بھی پہلی بار برملا انداز میں اس بات کا اعتراف کیا جب ایشائی ترقیاتی بینک اس منصوبے کیلئے 80فیصد رقم دینے میں رضامندتھی تو وفاق صرف 20فیصد کی رقم سے اس منصوبے کا آغاز کرتی تو کیا قباحت تھی۔
اس وقت گلگت سکردو روڈ کی حالت انتہائی ناگفتہ ہے جگہ جگہ گھڑے پڑ جانے سے گاڑیوں کی آمدورفت میں مشکلات کا سامنا ہے اور منزل تک پہنچنے میں مزید گئی گھنٹے لگ جاتے ہیں اس روڈ کی تعمیر میں وفاق کے ساتھ ساتھ صوبائی حکومت نے بھی کسی قسم کی پیشرفت کا مظاہرہ نہیں کیا ہے ہونا تو یہ چاہیے تھا کہ حالیہ وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کے دورہ گلگت کے موقع پر دیگر اہم منصوبوں سمیت اس روڈ کی تعمیر کا منصوبہ بھی وزیراعظم کے سامنے پیش کرتی اور وزیراعظم پر دبائو ڈالتے کہ اس شاہراہ کی تعمیر ہر حوالے سے ناگزیر ہے مگر وزیراعظم کے جانے کے بعد اس طرح کی بیانات میں کوئی وزن نظر نہیں آرہا ۔ اگر حکومت وزیراعظم کے سامنے صرف دو ارب کا ایک پیکج کی منظوری کے بجائے کچھ اہم عوامی نوعیت کے ترقیاتی منصوبوں کا اعلان کرواتی تو یہ بہت بڑی کامیابی ہوتی مگر صرف دو ارب کا اعلان ہوا مگر اس کا بھی معلوم نہیں کہ کب تک عمل درآمد ہو۔
گلگت بلتستان حکومت اس وقت سنگین مالی بحران سے دوچار ہے بائونس چیکوں اور ملازمین کو ادائیگیاں نہ ہونے سے عوام بھی شدید مالی مسائل کا شکار ہیں خزانے میں مذید فنڈز نہ ہونے سے علاقے کے تمام ترقیاتی کام ٹھپ ہو کر رہ گئے ہیں اس ساری صورتحال کو مد نظر رکھ کر صوبائی حکومت کو ہنگامی اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے اگر خزانے میں فنڈز نہیں ہیں۔،چیکس بائونس ہورہی ہے غربت میں اضافہ ہو رہاہیں،ترقیاتی کام منجمد ہو رہے ہیں، مزور بے روزگار ہو رہے ہیں، روزگار کے نئے مواقعے پیدا نہیں ہو رہے ہیں۔ تو اس صورتحال کا کوئی حل بھی نکالنا ہوگا ۔ یقینا ان مسائل کا حل نکالنے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر کوششیں کرنی ہونگی، امن و امان کی صورتحال بہتر بنا کر بیرونی سرمایہ کاروں کو لانا ہوگا۔ فنڈز لانے کیلئے وفاق پر دبائو بڑھانا ہوگا، گلگت سکردو روڈ سمیت دیگر اہم منصوبوں پر کام شروع کرنا ہوگا بے روزگاری پر قابو پانے کیلئے روزگار کے نئے مواقعے پیدا کرنے ہونگے۔ اگر ان تمام مسائل کے بروقت حل کیلئے اقدامات نہ اٹھائے گئے تو آئندہ کے حالات مذید خراب ہونگے اس لئے حکومت کو چاہیئے کہ اپنے دور حکومت کے آخری سالوں میں کم از کم کچھ ایسے عوامی اہمیت کے حامل منصوبوں کا آغاز ضرور کرے۔ جس سے آئندہ انتخابات میں انہیں ووٹ بینک بنانے میں مدد مل سکے اگر حکومتی کارکردگی یہی رہی تو آمدہ انتخابات میںصوبائی و وفاقی اسمبلیوں میں موجودہ حکومت میںشامل تمام پارٹیوں کوشدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s